ابو جہل زندہ ھے ؟

ابوجہل زندہ ہے؟ سیدہ رافیعہ گیلانی

اب علم و حکمت کا کیا کام
کیونکہ ملک میں تو اسلام ھے
بس تم انسانیت کا قتل عام کرو
بلا تامل مساجد کو ویران کرو
بلا خوف رشوت و سود کا کاروبار کرو
پیار کرنا ہے تو بد عنوانی سے پیار کرو
کیونکہ ملک میں تو اسلام ھے
سنو۔ جس جس سے دل راضی نھیں تیرا
اس کو پھر کیوں ھے زندہ چھوڑا
سچے عاشق رسول بھی تم ھو
شریعت کے حقدار بھی تم ھو
سچ تو یہ کہ اسلام کے ٹھیکیدار بھی تم ھو
کیوںکہ ملک میں تو اسلام ھے
اللہ کے احکام کو، رسول ص کے فرمان کو
بے فکر ہو کر بھلا دو
بلا خوف انسانیت کی بھر پور تزلیل کرو
اور بحث مباحثے طویل کرو
جو اچھا نہ لگے اسے کافر قرار دے دو
جسکی عبات گاہ چاہو اُسے اگ لگا دو
کیونکہ ملک میں تو اسلام ھے

جشن عید میلادالنبی مبارک

جشن پاک ولادت دا ہر سال ضرور مناؤ لوکو ۔ فرمان سونڑیں نبی ؑص دا پورا اک دوجے نوں سناؤ لوکو مخلوق اے ساری رب دا کنبۃ خلقت نوں پیار کر کے اسلام دی اصل شکل بناؤ لوکو ساری دنیا لیئے جیڑھا رحمت بن کر آیا یتیم ھو کر وی یتیماں نوں دتہ سایہ – سوچ زرا تو فرمان بنی ص نوں ۔ کش تھاں کس راں توڑ چڑھایا ؟ جشن عید میلادالنبی مبارک

عزت دار کون ؟

ھمارے ملک کے وزیر اعظم پر قتل دہشت گردی کے مقدمات درج ھو چکے ھیں ، یہ بات باعث ندامت تو ھے لیکن غور طلب بھی ھے کہ جب مقدمہ درج ھو جاتا ھے تو تو دوسرا مرحلہ ھوتا ھے مجرم کو پکڑ کر تحقیقات کی جائیں جب تک تحقیقات ھوں مجرم پولیس کی حراست میں رھے ، قانون تو ایسا ھی کہتا ھے لیکن ادھر تو پرچے درج بھی ھوئے تو کچھ نا ھوا کیا جرم صرف وھی بڑا ھوتا ھے جو کسی عام آدمی نے کیا ھو ، کافی لوگوں کو صرف شک کی بنیاد پر کئے گئے مقدمات میں ملوث ھونے کی وجہ سے پکڑ لیا جاتا ھے اور اتنا طلم کیا جاتا ھے کے وہ بچارے اپنی جائیداد بھی خرچ کر دیے ھیں اپنی جان چھڑانے کے لئے ، یہ کیسا قانون ھے ، اور صرف اس معاملے کی ھی بات نھیں ھے اور بھی ایسے افراد ھیں جو حکومت کا حصہ ھیں ان کے خلاف اکثر سوشل میڈیا پر اور مختلف ٹی وی چینل پر ثبوت بھی دکھائے جا رھے ھیں پھر بھی ایسے جرائم پیشہ نام نہاد عزت داروں کو کوئی بھی نھیں قانون کے کٹھرے میں لانے کی جرات نھیں کرتا ، کیا فائدہ ھے عدالتوں کا ھائی کورٹ کا سپریم کورٹ کا میری سمجھ سے بالا تر ھیں یہ باتیں بلکہ یہ ظلم کی داستانیں ،

تبدیلی ضروری ھے ؟

ھمارے ملک پاکستان میں کرپشن ، بد عنوانی ،رشوت ،اقربا پروری ، قتل غارت گری ، عدم برداشت ، لاقانونیت ، انتہا پسندی جیسی بیماریاں جڑ پکڑ چکی ھیں جس کی وجہ سے کڑوڑوں زندگیوں کا جینا محال ھو ا ھے یہ بات تو طے ھے کہ تبدیلی ضروری ھے اس نظام میں جس کی وجہ سے امیر ،امیر تر ھو رہا ھے غریب ، غریب تر ھو رہا ھے ، کوئی اعلی تعلیم کو ترس رہا ھے کوئی تعلیم لے کر بھی بے روزگار ھے ، انصاف کے معاملے میں بھی غریب کی شنوائی نا ھونے کی وجہ سے وہ مظلوم ھو کر بھی مجرم گردانا جاتا ھے ، شریف ھو کر زندگی گزارنا ناممکن ھو چلا ھے ، اس کا سد باب کیسے ھو گا کیا ھم آزمائے ھوئے لوگوں کو ھی بار آزماتے ھوئے اپنی نا سمھجی کی زندگی گزارتے رھیں گے ؟؟ ھمیں تبدیلی تو چاھئے لیکن صحیح سمت کا اندازہ نھیں رکھے ھیں ھم لوگ سب لوگ تنگ ھیں اس ماحول سے اس سسٹم ،نظام سے ، لیکن کسی نا کسی کو تو پہل کرنا ھے باہر نکلنا ھے اس نظام کے خلاف ۔ نا انصافی کے خلاف ظالموں کا محاصرہ کرنا ھے ، ان کو سزا دینا ھے ، ملک کی بقا اسی میں ھے کہ ہر ظالم غدار کا احتساب کیا جائے اور کسی کو چھوٹ نا دی جائے خوا ہ وہ اقتدار میں ھو یا نھیں ، اقتدار میں ھونا تو شرافت و اعلی کردار ، دیانت دار ھونے کا معیار نھیں ھوتا ،

آئین سب مل کر دعا کریں

فلسطین پر اسرائیل کی بربریت اور ظلم داستان شروع ھوئے ویسے تو پینتیس سال سے زیادہ کا عرصہ ھو چکا ھے ، لیکن حالیہ بمباری کو شروع ھوئے بھی ایک ھفتہ سے زائد ھو چکا ھے جس میں‌ اب تک سو سو سے بھی زیادہ مسلمان شہید ھو چکے ھیں اور بے شمار ذخمی ھیں ، ماہ رمضان میں جب تمام دنیا کے مسلمان روزے رکھ رھے ھیں سب سحری اور افطاری کے ساتھ ساتھ زیادہ سے زیادہ عبادت بھی کرنے کی کوشش کرتے ھیں اس ماہ میں بچارے فلسطینی اپنے پیاروں کے جنازے آٹھا رھے ھیں جو گھر میں بیٹھے نا حق قتل غارت گری کا شکار ھو رھے ھیں ان کی نسل کشی کی جارھی ھے اور دنیا کے ستاسی کے قریب مسلمان ملک خاموش تماشہ دیکھ رھے ھیں بلکہ دکھائی تو یوں دیتا ھے جیسے انھیں خبر ھی نھیں ھے ، ایسے لوگوں کی عبادات بھی کوئی فائدہ نھین دینگی جو اختیار رکھتے ھوئے بھی انسانیت کی بھلائی کے لئے کچھ نا کریں ، جن لوگوں کے پاس اختیار ھے وہ کچھ بول نھیں رھے اور جو احساس رکھتے ھیں وہ کچھ کر نھیں سکتے یا ان میں اتنی طاقت نھیں کہ وہ کچھ کر سکیں – ایسے میں صرف ایک ہتھیار رہ جاتا ھے وہ ھے دعا کا ، رمضان مبارک مھینہ ھے قران پاک کا نزول بھی اس ماہ با برکت میں ھوا ، مولا علی علیہ السلام کی شہادت بھی اس ماہ میں ھوئی ، اور بھی ایسے واقعات ھیں جو اس با برکت مھینہ میں ھوئے ، اے اللہ پاک اپنے محبوب محمد صل اللہ علیہ وآلہ وسلم کے صدقے ، کل انبیا ع ۔ س کے صدقے معصومین کے صدقے اور وسیلے سے غائب سے اپنے مسلمان بندوں فلسطینیوں کی مدد کر ان پر رحم فرما اور تمام مسلمان قوم کو احساس غیرت وقار کے ساتھ بیداری کی کیفیت عطا فرما آمین ، یا اللہ یا رحمن یا رحیم تجھے اپنی بزرگی کا واسطہ ھمارے گناہ معاف فرما ھمارے اعمال درست فرما آمین ثم آمین

کہانی جو حقیقت لگتی ھے

میں نے بچپن میں ایک کہانی سنی تھی جو آپ سب سے شیئر کررھی ھوں دو بھائی تھے ان کو وراثت میں تین چیزیں ملیں تھیں ایک گائے جو دودھ دیتی تھی دوسرا کمبل ، اور تسرا کھجور کا درخت جس پر پھل لگا تھا ، اب تین چیزوں کی تقسیم کا مرحلہ تھا جسے بڑے بھائی نے چالاکی کے ساتھ حل کیا ، تین چیزیں ھیں اور حصے دو ھونے ھیں لہذا برابر ھی تینوں تقسیم ھونگی لیکن جس طرح سے تقسیم ھوئیں اس کا حال سنیئے – گائے جو دودھ دیتی ھے اس کا اگلا منہ والا حصہ چھوٹا بھائی لے گا اور پیچھے والا حصہ جہاں سے دودھ دوہیا جاتا ھے وہ بڑا بھائی لے گا – کمبل کی تقسیم اس طرح کی گئی کہ رات کو بڑا بھائی کا ھوگا اور دن نکلتے ھی چھوٹا بھائی لے لے گا – درخت بھی اسی طرح اور والا آدھا حصہ جس پر پھل لگتے ھیں وہ بڑا بھائی لے گا اور نیچے کا پورا آدھا حصہ چھوٹا بھائی لے گا ، Continue reading کہانی جو حقیقت لگتی ھے

ادب کی اہمیت –

ادب کیا ھے ؟المختصر کھیں تو ادب اصل میں تنقید حیات کا نام ھے چاھے وہ افسانے ھوں شعر و شاعری ھو- یہ بات تو واضح ھے کہ ادب مختلف شعبہ زندگی کے حالات و واقعات کنتی میں وجود میں آتا ھے کیوں کی ادب انسانی خیالات کا ترجمان ھوتا ھے کوئی بھی لکھنے والا جس دور میں جی رہا ھوتا ھے اس کی تحریر ضرور اسی دور سے متاثر نظر آتی ھے جیسا ماحول ھو گا یوں کھیں نظارہ ھو گا Continue reading ادب کی اہمیت –

ھم کب بیدار ھونگے ؟

یہ ایک کڑوی حقیقت ھے کہ ھماری قوم سوئی ھوئی ھے اسی لےلئے لوگوں کی اکثریت کوملکی حالات و واقعات سے دلچسپی نھیں ھے ، 1947 سے پہلے ایک قوم کو ملک کی تلاش ھو گی کہ انھوں نے ہر قربانی دی عزت مال اپنے ابائی جائداد ورثہ سب چھوڑ دیا اس ملک کو پانے کے لیئے – لیکن آج اسی ملک کو ایک قوم کی تلاش ھے کیونکہ یہ قوم وہ نھیں رھی جس کو محنت قربانیوں سے حاصل کئے گئے وطن کے زرے زرے کی دیانت داری سے دلجمعی سے اور محبت سے حفاظت کی ضرورت ھے جس کے تحت اس ملک کا وجود ھوا تھا آج ھم لوگ اس شوق ولولہ سے محروم ھیں جس کے تحت ملک اور قومیں ، معاشرے ترقی کرتے ھیں ھمارا معاشرہ نا سمجھ بچے کی ماند ھو چکا ھے Continue reading ھم کب بیدار ھونگے ؟

تھر کے لوگوں کے نام لکھی گئے ایک نظم او انجان

اپنے ووٹ دی پرچی پا کے اپنے نال آپ ظلم کیتا تون انجان سوسو طعام کھا کے بن گئے اے پہلوان ملک نوں لٹ کے کھادی جاندے نا کوئی فکر نا کوئی فاقہ وانگ مہمان ستر سال وچ لگدے نے ویکھو جیویں بتیاں سالاں دے جوان لندن امریکہ پا لیتے ایناں اپنے اپنے نویں مکان عوام ویچاری مردی جاوے ھوئی روزی روٹی توں پریشان

آدمی کا یہ گھناؤنا چہرہ سمجھ سے بالا تر ھے ؟

یہ بات میں انتہائی دکھ اور کرب میں کر رھی ھوں ھو سکتا ھے آپ سب کو پہلے سے پتا ھو مگر مجھے اے آر وائی ٹی وی کے پروگرام کے زریعے سے پتا چلی جس میں سر عام ایک پروگرام کا نام ھے میں دکھایا گیا ھے کہ مزار قائد پر بد فعلی کے لئے اڈا قائم کیا ھوا تھا جسے انتظامیہ کی ملی بھگت سے چلایا جا رہا ھے میں سوچ رھی ھوں Continue reading آدمی کا یہ گھناؤنا چہرہ سمجھ سے بالا تر ھے ؟

طالبان سے مزاکرات قوم سے مذاق ھے

ملک عزیز میں اب تک جو بھی پر تشدد واقعات ھو ئے ھیں یا ھو رھے ھیں ، وہ خواہ قتل غارت گری ھو املاک کا نقصان ھو ، ہر برادری ہر قوم ہر مسلک ہر گروپ اور گروہ فوج ، و پولیس پر حملہ ھو یا نسلوں کو تباہ کرنے جیسے گھناؤنے جر م ھو ان سب میں طالبان کا ہاتھ ھے اور وہ خود ڈنکے کی چوٹ پر زمہ داری قبول بھی کرتے ھیں ، پھر اس قدر سفاک اور ظالم درندوں سے حکومت کا مزاکرات کرنا ایک بہت بڑی حماقت ھے ، Continue reading طالبان سے مزاکرات قوم سے مذاق ھے

دہشت گر د معاشرہ

کافی دنوں سے میں ایک بات سوچ رھی تھی کیا کسی کی جان لینا ھی دہشت گردی ھے ، میرے خیال میں تو جان لینا تو ایک ظلم اور بڑا گناہ ھے ھی اس کے ساتھ ساتھ اپنے رویئے سے کسی کو تکلیف دینا بھی دہشت گردی ھی ھے اگر غور کریں تو اکثر جرائم اور مسائل اسی روئیے کی وجہ سے پیدا ھوتے ھیں جب معاشرہ میں خود غرضی بے حسی ، لالچ طمع نفرت ، عدم برداشت ، تکبر ،رعونت ، احساس برتری ، حسد ، حرص ، عام ھونے لگے تو پورا معاشرہ ھی دہشت گرد ی کی طرف مائل ھوتا ھے Continue reading دہشت گر د معاشرہ

سرائیکی نظم ، اپنا ملک تے عید

اساں وسدے ہاں پاکستان ویچ – ساڈی یارو کیتھ دیاں عیداں ھین – کجھ مہنگائی کم خراب کیتا – اتوں لوڈ شیڈینگ ھے عزاب ڈیتا – کوئی چوریں تے ڈاکوئیں دے ھتھ چڑھیا – کہیں کوں دہشت گر ھے مار ڈیتا – کوئی روندا ودے آپنے پیارے کوں – کہیں کوں خود اپنے سجن ھے مار ڈیتا – کیھیں کیھیں گال دا ڈوکھ کڈھاں – کھیں کوں گھر پیٹھے ڈرون ھے ساڑ دیتا – ہر ہر جا ظلم دی اندھاری ھے – جیندا جتنا وس چلیا ھوں اتنا ملک لتاڑ ڈیتا – اردو ترجمہ – ھم پاکستان کے رھنے والے — لوگوں کی کیا عیدیں ھونی ھیں — ادھر مہنگائی نے بہت برا حال کیا ھے – پھر اوپر سے لوڈشیڈینگ نے عزاب دے رکھا ھے – کہیں کوئی شخص چور ڈاکوؤں کے ھاتھوں لٹ گیا ھے — کہیں کوئی دہشت گردی کا شکار ھو کر مر گیا ھے – کوئی اپنے پیاروں کو روتا پھر رہا ھے – اور کھہں کسی اپنے نے ھی اپنے کو مار دیا ھے – ھم کس کس بات کا رونا روئیں – کہیں پر گھر بیٹھے ھوئے لوگوں کو ڈرون حملہ سے جلایا جا رہا ھے – ہر طرف ظلم کی آندھی آئی ھوئی ھے – جس کا جتنا بس چلتا ھے وہ اس ملک کو اپنے پاؤں سے روند رہا ھے –

گواھی دے رھی ھے دھو پ میں تربت بتول ؑکی ——- واہ کیا خوب نبھائی ھے مسلمان نے اطاعت رسول ؐکی –

آج سے90 سال پہلے روضہ رسول صلے اللہ وآلہ وسلم سے صرف ڈھائی سو گز کی دوری پر پاک اور مقدس ہستیوں کو ان کی قبروں سے محروم کر دیا گیا یہ وہ ھستیاں ھیں جو وجہ کائنات کے مشن میں برابر کی شریک رھی ھیں ان کی زندگیاں ھم سب کے سامنے ھیں یہ مقدس ہستیاں اتنا رحم دل اور نرم خو ھیں کہ انھوں نے ایک جانور کو بھی دوسرے جانور کے سامنے زبح کرنے سے منع فرمایا ھے Continue reading گواھی دے رھی ھے دھو پ میں تربت بتول ؑکی ——- واہ کیا خوب نبھائی ھے مسلمان نے اطاعت رسول ؐکی –

افسانہ ناشکری عورت

شفق نے ٹی وی لگایا تو کسی مذھبی چینل پر مولوی صاحب جنتی اور دوذخی لوگوں کے بارے میں بتا رھے تھے ان میں ایک بات یہ بھی کہی جہنم میں سب سے زیادہ تعداد عورتوں کی جائے گی اس کی وضاحت اس طرح کی کے عورتیں ناشکری بہت ھوتی ھیں کسی بھی سہولت کے مل جانے پر بجائے شکر کرنے کے دکھی ھوتی ھیں کہ ایسا نا ھوتا یا کیوں ھوا تھا ، پروگرام ابھی جاری تھا کہ شفق دل میں اپنے بارے میں سوچنے لگی کہ اس طرح تو میں بھی بہت گناہگار ھوں اور جہنم کی حقدار ھوں کیوں میں بھی اپنے ساتھ ھوئے ہر واقعے کو زہنی اور دلی طور سے قبول نھیں کرتی رھی بلکہ بہت کرب کی کیفیت میں رھی ھوں ، پھر اس کے ذہن میں جیسے فلم سی چل گئی اس کی زندگی کی- وہ یاد کرنے لگی جب ایک دن وہ سکول سے آئی تھی تو اس کو خبر سنائی گیئ کے کل اس کو دیکھنے مہمان آئیں گے کیوں کہ اس کے والد ین اس کی شادی جلد کرنا چاھتے ھیں Continue reading افسانہ ناشکری عورت

عید مبارک ، سرائیکی میں آپ سب کی خدمت میں پیش کرتی ھوں ،۔۔

سرائیکی نظم ، عید دا ڈھوآ ، سوچیا ہیم سونڑھیں دلبر کوں ، ہیں عید دا ڈھوآ کیا بھیجاں ؟ ہر شے توں جیڑاھا قیمتی ھے او حیاتی دے بچدے سا بھیجاں تا قیامت شالا وسدے رھوؤ ھتھ چا چا نال دعا بھیجاں یار سجن ھین حیاتی دا ھار سنگھار نال ول ول اے وی اکھا بھیجاں اردو ترجمہ ، میں نے سوچا ھے اپنے دوست کو ا س عید کا تحفہ کیا بھیجوں ؟ جو ہر چیز سے زیادہ قیمتی ھے اپنی زندگی کے باقی بچے سانس بھجیوں تاقیامت اللہ کرے آپ سلامت رھیں ھاتھ اٹھا آتھا کر ساتھ یہ دعا بھیجوں دوست احباب تو زندگی کا بناؤ سنھگار ھوتے ھیں ساتھ میں بار بار یہ بھی کہلا بھیجوں

ظلم اور بر بریت ؟

میں اکثر سوچتی تھی کہ اللہ پاک نے موت کیوں بنائی لیکن عقل کی نگاہ سے دیکھیں تو اللہ کا کوئی بھی کام مصلحت سے خالی نھیں ھے بے ۔ انسان دنیا مین چند دن کے لئے گنی ھوئی سانسیں لے کر آیا ھے کوئی نھیں جانتا کب سانس بند ھو اور زندگی کا نام و نشان تک نا رھے غرض یہ کے انسان بہت بے بس اور لاچار ھے صرٖ ف اللہ کی بادشاہی ھے جو ھمیشہ سے ھے اور ھمیشہ رھے گا ، Continue reading ظلم اور بر بریت ؟