امید کی کرن

A lucky Pakistan

امید کی ایک کرن

مندرجہء ذیل مضمون میرے بھانجے نیاز مرتضٰی کا ہے جو ڈان میں چھپا ہے۔ یہ مضمون میرے لئے حوصلہ افزا ہے۔ نیاز نے برکلے سے پی ایچ ڈی کرنے کے بعد کئ سال اقوامِ متحدہ کے ساتھ تیسری دنیا میں کام کیا ہے۔ نیاز تیسری دنیا کی سیاست اور معاشیات کا ماہر ہے۔

Dr. Niaz Murtaza
Luck means that factors beyond one’s control supplement one’s efforts and merits to produce higher achievements. Highlighting heart-warming stories about sacrifices and perseverance, official narratives ignore luck’s role in national histories. However, academics must present complete truths. Though not necessarily the dominant factor, luck helped improve the Pakistan movement’s prospects and subsequent economic performance. We first consider the former.

The prospects of partition movements firstly depend on presenting strong claims about being a separate nation. The ideal nation is a large group of people having: i) a long common ethnic, racial or religious identity, ii) concentration and overwhelming majority in a large geographical area since long, iii) minimal internal racial, ethnic or religious differences and little such commonalities with neighbors. Japan scores highly on this definition. My Pakistani heart shouts that so did pre-1947 Indian Muslims. My academician’s head quietly assigns them low-to-moderate scores on criteria two and three. Ironically, even such scores still earn Pakistani nationhood reasonable ranking among third-world states since few of them house highly cohesive nations. Furthermore, national cohesion in present-day Pakistan has increased over 70 years, something Yugoslavia and USSR could not achieve in similar time.

Secondly, high nationhood scores are insufficient motivators or criteria for secession. Numerous nations with higher scores never pursue independence. Those that do so usually base it on unusually severe and prolonged mistreatment by dominant groups; most still fail. The Pakistan movement was an unusual pre-emptive one, based on fears of future domination rather than prolonged past mistreatment. It probably is the only preemptive separation movement to ever succeed. Thirdly, separation movements often succeed after many decades (Eritreans and South Sudanese); some remain unsuccessful even then (Kurds and Palestinians). Pakistan is among a few which got separation within years of demanding it. Ironically, Bangladesh did even better on this count.

Fourthly, separatists often suffer enormous one-sided brutalities, including heavy artillery and aerial attacks, in pursuing independence. Indian Muslims did not suffer one-sided casualties in asymmetrical war; rather casualties which were suffered by both sides in riots and which mostly occurred needlessly after independence’s approval. Given these four points, the Pakistan movement, despite incurring high losses in riots, seems highly lucky compared with the failure of many independence movements which possess higher nationhood scores and have suffered decades of one-sided brutalities. Conservatives may attribute this comparatively easier success to not luck but divine support for the Islamic fortress!

Present-day Pakistan was among pre-1947 India’s most backward regions. The British and Indians doubted its economic viability. Even Jinnah lamented his moth-eaten, truncated Pakistan. This truncation emerged from Muslim’s low score on the second nationhood criterion. However, luck blessed Pakistan even after independence economically. Pakistan surprisingly outperformed better-endowed India on poverty, overall growth rates and per capita income for nearly fifty years, partially due to favorable opportunities provided by the Korean, Cold and two Afghan wars and the ME bonanza.

Mohajirs benefited the most from this. Indian Muslims have the lowest average incomes among Indian religious groups. However, their migrated kin in Karachi have the highest average incomes among Pakistani ethnic groups despite their initial uprooting and subsequent reverse discrimination experiences. America is the land of immigrants. Not even there do post-WW2 immigrants enjoy such predominance. But natives have likely done better too. Present-day Pakistan is probably more industrialized than it would be within undivided India. Much of Indian industry is still south-based. Pakistani elites–industrialists, traders, bureaucrats, professionals, landlords, generals and mullahs—have certainly benefited highly from partition. Even the masses have probably done slightly better since absolute poverty is lower in Pakistan despite India’s comprehensive land reforms. Thus, partition has paid-off economically till now.

Two caveats apply to my “luck” thesis. First, luck helped Pakistan economically only, not politically. Its political performance was always poorer than India’s. Secondly, luck dividends ultimately subside and endowments primarily determine long-term performance. Thus, India now outperforms Pakistan overall even economically. Pakistan’s recent security and political turmoil has undermined its economic edge.

Nevertheless, both my Pakistani heart and academician’s head agree fully that Pakistan’s worst travails are probably behind it and that its future will gradually become better than its past. However, they agree to disagree on the pace of this transformation, with the former expecting and demanding overnight results and the latter robotically producing calculations suggesting a longer timeframe.

Is this article unpatriotic? It clearly challenges cherished conservative national myths. Yet, it is underpinned by the reality that nation-building, the common goal of both, is better facilitated by the truth propagated by liberals rather than the incredulous fairly-tales concocted by conservatives.

The writer is a political and development economist. murtazaniaz@yahoo.com

ہم کہاں ہیں

ایرانی، تُرک یا عرب اپنی ایرانی، تُرک یا عرب تاریخ پر فخر کرتے ہیں۔ جبکہ ہم بجائے تاریخِ پاکستان کے مسلمانوں کی تاریخ پر فخر کرتے ہیں۔ اس پر عربوں کا جواب ہوتا ہے کہ یہ تو ہماری تاریخ ہے تُم کدھر سے آگئے؟ ہم پاکستانی ہونے پر فخر نہیں کرتے ؟ ہمارے پاس پنجابی، سندھی، بلوچ، پختون، سرائیکی، کشمیری، اُردو کلچر تو ہے لیکن پاکستانی کلچر کیا ہے ، یہ بڑا مشکل سوال ہے۔ اس کا جواب شاید آپ کے پاس ہو۔

مسلمانوں میں مفاہمت

جسقدر سعودی عرب ماضی میں پاکستان کی مالی مدد کرتا رہا ہے اس کے پیشِ نظر پاکستان کو اس بات کا اختیار نہیں ہے کہ وہ اسوقت جبکہ سعودی بادشاہت دباؤ میں ہے اس کی مدد نہ کرے۔ اپنے محسن کی مدد کرنا یقیناً ہمارا فرض ہے۔ لیکن اتحادِ بینالمسلمین کی ہمیں سخت ضرورت ہے۔ ترکی اور پاکستان اس وقت اس پوزیشن میں ہیں کہ یہ دونوں طاقتور ممالک اس وقت ملکر سعودی عرب اور ایران کے مابین ایک متحرک اور پُر عزم ثالث کا کردار ادا کرتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان غلط فہمیوں کو دور کروائیں۔ سعودی عرب کو سب سے بڑا ڈر اپنے آئل کا ہے۔ انکی آئل فیلڈز جنوبی عراق سے جُڑی ہوئ ہیں جہاں کے عوام سعودی بادشاہوں سے خوش نہیں ہیں۔ ان پر سعودی بادشاہوں نے ہمیشہ ظلم ہی کیا ہے۔ تُرک بھی ان بادشاہوں سے نالاں رہے ہیں کیونکہ انہوں نے انگریزوں سے ملکر خلافتِ عثمانیہ کو ختم کروادیا اورخود بادشاہ بن بیٹھے۔ بہرکیف ترکوں نے اس وقت بڑا دل کرکے اتحادِ بینالمسلمین کا بیڑہ اُٹھایا ہے۔ پاکستان مسلمانوں کا سب سے زیادہ طاقتور ملک ہے۔ ترکی اور پاکستان اسوقت ملکر ایران اور سعودی عرب کو گلے ملواسکتے ہیں۔ یہ مسلمانوں پر سب سے بڑا احسان ہوگا ۔ ایرن کو یہ یقین دہانی کروانے کی ضرورت ہے کہ وہ ان بادشاہتوں میں کوئ ماخلت نہیں کریگا ۔ جبکہ سعودی بادشاہوں کو بھی دوسرے مسالک میں مداخلت سے دور رہنے کی ضرورت ہے۔

کھیل،سیاست یا عدم دلچسپی

کرکٹ ورلڈ کپ ہورہا ہے اور کھیل میں ہار بھی ہوتی ہے اور جیت بھی۔ لیکن کھیل میں لڑنا یا نہ لڑنا کھلاڑی اور ٹیم کے ہاتھ میں ہوتا ہے عرب امارات میں کچھ ہی عرصہ قبل پاکستانی ٹیم نے ٹیسٹ میچز میں جس طرح نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کو شکست سے دوچار کیا تھا ، جس طرح پاکستانی بلّے بازوں نے سنچریوں کا انبار لگایا تھا اُسکے بعد یہ اُمید ہوئ تھی کہ اس مرتبہ پاکستان شاید ولڈ چیمپین بن جائے۔ لیکن ویسٹ انڈیز کے خلاف پاکستانی ٹیم نے جس بے دلی سے کھیلنے کا مظاہرہ کیا ہے اُسکی مثال نہیں ملتی۔ Continue reading کھیل،سیاست یا عدم دلچسپی

فرانس جیسے ممالک سے درآمدات کو بند کردینا چاہئے

دہشتگردی مسائل کا حل نہیں ہے۔ دہشت گردی کی وجہ سے مسلمان بالعموم اور پاکستان بالخصوص دنیا کی نفرت کا نشانہ بن رہے ہیں۔ اگر کوئ بھی ملک مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرتا ہے تو اُس ملک پر سارے مسلمان ممالک کو او آئ سی کے پلیٹ فارم پر کھڑا ہوکر اُس ملک پر سینکشنز لگادینے چاہئیں۔ سب سے بڑا سینکشن یہ ہوگا کہ مسلمان ممالک ایسے ملکوں سے درآمداد بند کردیں۔ اُنکی اشیا استعمال نہ کریں۔

طالبان کے حمائتی

جب تک مولانا فضل الرحمٰن، جنرل حمید گُل، نواز شہباز شریف، عمران خان، شدت پسند ملا یا جنرل بیگ سے طالبان کے مدر پدر آزاد حمائتی آزاد گھومتے رہیں گے پاکستان میں عوام آرام سے نہیں سوسکتے۔ Continue reading طالبان کے حمائتی

کیا بھارت کا علاج چین پا کستان کنفیڈریشن ہے؟

جب میں بھارت کا رویہ دیکھتا ہوں تو بہت سے سوال ذہن میں اُبھرتے ہیں۔ پھر ایک ہی فارمولا سامنے آتا ہے یعنی جسکی لاٹھی اُسکی بھینس۔ ہمارا سارا پانی بھارت کے رحم و کرم پر ہے- وہ جب چاہے ہمارا پانی روک سکتا ہے اور جب چاہے ہمیں سیلاب کی نظر کرسکتا ہے۔ ایٹم بم نہ وہ استعمال کرسکتا ہے نہ ہم کرسکتے ہیں۔ Continue reading کیا بھارت کا علاج چین پا کستان کنفیڈریشن ہے؟

آیئے ایک خط پڑھئے ۔۔ دعا کیجئے ۔۔

باجی السلام علیکم

باجی آپ سے دعا کی درخواست ہے کہ ان دنوں میں ایک زبردست پریشانی میں مبتلا ہوں میرا سترہ سالہ بیٹا محمد اسامہ رضا جو کہ نارتھ ناظم آباد میں واقع اسلامک سینٹر میں علوم اسلامیہ کے چوتھے سال کا طالب علم ہے وہ 25 دسمبر 2014 کو سینٹر سے پیپر دے کر گھر نہیں آیا ہے آج اس بات کو آٹھ دن ہورہے ہیں ہم سب شدید پریشان ہیں اس کا موبائل آف جارہا ہے اور کہیں سے کوئی سراغ نہیں مل رہا ہے میری وائف ادھ مری کیفیت سے دوچار ہے جبکہ خود میری حالت کیا ہے میں آپ کو بیان نہیں کرسکتا ۔ Continue reading آیئے ایک خط پڑھئے ۔۔ دعا کیجئے ۔۔

سالِ نو ۔ عمر خیّام

شمسی سالِ نو سارے احباب کو مبارک ہو۔ شمسی کیلنڈر عمر خیّام کی دین ہے۔ آٹھ سو سال پہلے یہ کیلنڈر معہ Leap Year کے عمر خیّام نے دنیا کو دیا تھا۔ اس کیلنڈر میں اور فطری کیلنڈر میں صرف آدھے سیکنڈ کا فرق ہے۔ اس ہی وجہ سے ہر تین چار سال بعد گھڑیوں کو ڈیڑھ دو سیکنڈ کے لئے adjust کیا جاتا ہے۔

جشن عید میلادالنبی مبارک

جشن پاک ولادت دا ہر سال ضرور مناؤ لوکو ۔ فرمان سونڑیں نبی ؑص دا پورا اک دوجے نوں سناؤ لوکو مخلوق اے ساری رب دا کنبۃ خلقت نوں پیار کر کے اسلام دی اصل شکل بناؤ لوکو ساری دنیا لیئے جیڑھا رحمت بن کر آیا یتیم ھو کر وی یتیماں نوں دتہ سایہ – سوچ زرا تو فرمان بنی ص نوں ۔ کش تھاں کس راں توڑ چڑھایا ؟ جشن عید میلادالنبی مبارک

عالم آرا

اے قائد
دیا تھا آپ نے ہم کو بہت پیارا وطن قائد
ہوا دولخت وہ ،ہم تو بہت شرمندہ ہیں قائد
بعد تیرے نہ ملا ہم کو تجھ سا کوئی شہہ زور
جو دیتا ہم کو طاقت اور باہم جوڑتا قائد
پیا جونکوں نے اس کا خون کیا کمزور بھی اس کو
کسے معلوم تھا دیمک ہمیں چاٹے گی یوں قائد
نہ نحیف امید ہے نہ حوصلہ ہارے ہیں ہم Continue reading عالم آرا

عالمی اخبار کی نائب مدیر ڈاکٹر نگہت نسیم کی والدہ کو سپرد خاک کر دیا گیا

nighat mother
ڈاکٹر نگہت نسیم کی والدہ کو پیر کے روز لندن میں سپرد خاک کر دیا گیا۔
اس سے قبل نماز ظہر کے فوری بعد انکی نماز جنازہ انجمن اسلامیہ مسجد نیو ہیم میں ادا کی گئی جس میں بڑی تعداد میں مردوں اور خواتین نے شرکت کی۔ احباب نے مرحومہ کے بیٹوں سے تعزیت کی اور امام نماز نے مرحومہ کی مغفرت کی دعا کرتے ہوئے انکے درجات کی بلندی کی دعا کی
عالمی اخبار کی نمائیندگی مدیر اعلیٰ صفدر ھمدانی کے علاوہ فرخندہ رضوی اور انکے شوہر نے کی Continue reading عالمی اخبار کی نائب مدیر ڈاکٹر نگہت نسیم کی والدہ کو سپرد خاک کر دیا گیا

ڈاکٹر نگہت نسیم کی والدہ کومے میں ہیں۔ دعا کی ضرورت ہے

عالمی اخبار کی ہماری ساتھی ڈاکٹر نگہت نسیم کی والدہ ہسپتال میں کومے میں ہیں۔ آپ سب سے دعا کی درخواست ہے۔ ڈاکٹر نسیم فوری طور پر سڈنی سے لندن کے لیئے روانہ ہو چکی ہیں۔ دعا ہے کہ پروردگار اپنی رحمت کے صدقے ایک بار پھر انکو والدہ کو زندگی کی نوید دے۔آمین

زیارتِ امام حسین علیہ السلام

Safar-e-karbalaصد شکر ہے خدائے لم یزل کا جس نے ھمیں توفیق عطا فرمائی کہ ھم اس پاک سر زمینِ کربلا پر ابنِ ساقیِ کوثر، شافع محشر، سیدِ شباب الجنہ، نواسئہ رسول (ص) ، جگر گوشہٗ بتول امام ِ عالیٰ مقام حضرت امام حسین علیہ السلام کے حرمِ مقدس پر اپنی جبیںِ بے عمل سے بوسہ لے سکیں ۔

بہ ازنِ محمد و آلِ محمد(ص)  ھم اپنی شریکِ حیات  کے ھمراہ انشاٗاللہ  ۴ اور ۵ دسمبر کی درمیانی رات کو راہیِ ارضِ کربلاٗ ہونگے ۔ فرداً فرداً سب افراد سے رابطہ نہیں ہوسکتا تھا اس لیے عالمی اخبار کی وساطت سے   عالمی اخبار  کے  تمام لکھاری اور قارئین   اور خصوصاً   جناب ھمدانی صاحب اور آپی نگہت نسیم  کی خدمت میں حاضر ہیں اور التماس ہے  کہ اگر ھم سے دانا یا نادانستگی میں کسی کی کوئی دل آزاری ہوگئی ہو تو ھمیں معاف فرما دیں۔

ھم دعا گو ہیں کہ ربالعزت آپ تمام افراد کو صحت و سلامتی عطا فرمائے اور سب کو اپنی حفظ وامان میں رکھے آمین ۔

سالگرہ مبارک

بھائیوں اور بہنوں۔ قمری مہنے گھومتے رہتے ہیں جبکہ ہم سارے کام شمسی کلینڈر سے کرتے ہیں۔ آج اس عظیم ہستی کا یوم ِ پیدا ئش ہے جو ہہم سب کوبہت پیارا ہے، ہمارا میر کارواں ہے، سوچا تو سب نےہوگا مگر رواج کے خلاف تھا۔ محرم کا مہینہ ہے پتہ نہیں وہ قبول کریں یا نہ کریں۔ صفدر بھائی آپ کو میری طرف سے سالگرہ مبارک ہو۔